بچوں میں تمباکونوشی کارجحان بڑھنے لگا

اسلام آباد(اے ایف بی)ریسرچ انسٹی ٹیوٹ پاٸیڈ کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں ہر روز 1200 بچے سگریٹ نوشی کی طرف جا رہے ہیں جو انتہاٸی خوفناک اعداد و شمار ہیں رپورٹ کے اعداد و شمار کے مطابق سگریٹ نوشی میں مبتلا ہونے والے بچوں کی عمریں 13 سے 17 سال کے درمیان ہیں ۔

رپورٹ کے مطاب پاکستان میں ہر سال اسی ارب سگریٹ فروخت ہوتے ہیں جو انتہاٸی خوفناک حقاٸق ہیں جس کی وجہ سے سالانہ ایک لاکھ ستر ہزار سگریٹ نوش مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو کر موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں ۔ اس وجہ سے حکومت کو صحت کے شعبے میں تقریبا 670 ارب روپے کا نقصان ہو رہا ہے ۔

تمباکو نوشی کی صنعت سے حکومت کو ٹیکس کی مد میں محض 37 ارب روپے حاصل ہوتے ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ تمباکو کی صنعت پہ زیادہ سے زیادہ ٹیکس لگایا جاۓ اور کھلے سگریٹ پہ پابندی کے ساتھ ساتھ اس بات کو یقینی بنایا جاۓ کہ دکاندار بچوں کو سگریٹ فروخت نہ کریں ۔ ان اقدامات سے سگریٹ کی فروخت میں نہ صرف کمی آۓ گی بلکہ سگریٹ پینے والوں کی حوصلہ شکنی بھی ہو گی,۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

Protected with IP Blacklist CloudIP Blacklist Cloud