جی بی اسمبلی سے گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنانے کی قرارداد منظور

گلگت(اے ایف بی) گلگت بلتستان اسمبلی نے گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنانے کی قرارداد منظور کرلی۔وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشید اور قائد حزب اختلاف امجد حسین ایڈوکیٹ نے گلگت بلتستان اسمبلی میں گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنانے کی قرارداد پیش کی جسے منظور کرلیا گیا۔قرارداد میں گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ بنانے کا مطالبہ کیا گیا ہے، قرارداد کے متن میں کہا گیا ہے کہ وفاقی حکومت، وزیراعظم اور ریاستی ادارے گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبے کا درجہ دے کر اسے قومی اسمبلی اور دیگر وفاقی اداروں میں مناسب نمائندگی دیں۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ گلگت بلتستان کو عبوری آئینی صوبہ قرار دینے کے لئے دستور پاکستان میں ترمیم کی جائے۔ اس سلسلے میں آئین میں ترامیم کا بل پارلیمنٹ سے منظور کرایا جائے، آئینی ترامیم میں اس بات کا خیال رکھا جائے کہ اس سے مسئلہ کشمیر متاثر نہ ہو۔ گلگت بلتستان کے عوام کشمیری بھائیوں کی سیاسی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے۔واضح رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے گلگت بلتستان کے گزشتہ انتخابات کے دوران اسے عبوری صوبے کا درجہ دینے کا اعلان کیا تھا۔

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کا کہنا ہے کہ گلگت بلتستان کو عبوری صوبہ بنانے پر چین ہماری حمایت اور بھارت پروپیگنڈاکرے گا، ہمیں بھارت نہیں پاکستان کے مفادات کو دیکھنا ہے۔ گلگت بلتستان کو عبوری صوبہ بنانے کی قرارداد منظور ہونے کے حوالے سے کہا کہ اس فیصلے کے پاکستان کی تاریخ میں دورس نتائج سامنے آئیں گے، جی بی کو عبوری صوبہ جتنا جلد بنایاجائے اتنا اچھا ہوگا۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ میراخیال ہے جی بی کو عبوری صوبہ بنانے کا مرحلہ باآسانی مکمل ہوگا اور اپوزیشن کو احساس ہوگایہ پاکستان کےمفاد میں ہے انشااللہ وہ ساتھ دیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

Protected with IP Blacklist CloudIP Blacklist Cloud