موٹروے خاتون زیادتی کیس : مرکزی ملزم عابد کا دوست گرفتار، واقعے میں ملوث ہونے کا اعتراف

لاہور(اے ایف بی) موٹروے گجر پورہ خاتون زیادتی کیس میں پولیس نے مرکزی ملزم کا دوست شفقت نامی شخص کو گرفتار کرلیا، گرفتار شفقت نے واقعے میں ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق گجر پورہ خاتون زیادتی کیس میں اہم پیش رفت سامنے آئی ، لاہور پولیس نے شفقت نامی شخص کو گرفتار کرلیا، وقارالحسن نے اپنے بیان میں شفقت نامی شخص کی نشاندہی کی تھی، وقار الحسن کے مطابق گرفتارملزم شفقت مرکزی ملزم عابد کادوست ہے، دونوں مل کر وارداتیں کرتے تھے ذرائع کا کہنا ہے کہ گرفتارملزم شفقت کا ڈی این اے ٹیسٹ کرایاجارہاہے جبکہ شفقت نے واقعے میں ملوث ہونے کا اعتراف کر لیا.

اس سے قبل کیس کے ملزم وقارکے برادرنسبی عباس نے بھی شیخوپورہ میں پولیس کو گرفتاری دی تھی ، عباس نے ویڈیو بیان میں جرم ماننے سے انکار کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں بے گناہ ہوں،خودکوپولیس کیسامنیپیش کر رہا ہے،امیدہے پولیس ناجائزنہیں کرے گی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ عباس زیادتی کیس کیمرکزی ملزم عابد کیساتھ رابطے میں تھا جبکہ وقار نے گزشتہ روز عباس کو زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد کا ساتھی قرار دیا تھا۔ گذشتہ روز گجرپورہ میں خاتون سے اجتماعی زیادتی کیس میں اہم ملزم وقار الحسن نے از خود کرائم انوسٹی گیشن ایجنسی (سی آئی اے) دفتر میں پیش ہو کر گرفتاری دی تھی تاہم ملزم نے صحتِ جرم سے انکار کیا تھا۔

بعد ازاں وقار الحسن کا ڈی این اے سیمپل لے لیا گیا تھا، جسے متاثرہ خاتون کے ڈی این اے سے میچ کیا جائے گا، وقار الحسن کے واقعے میں ملوث ہونے کا حتمی فیصلہ رپورٹ پر ہوگا وقارالحسن نے دوران حراست مزیداہم انکشافات کرنے ہوئے بتایا تھا کہ مرکزی ملزم عابدشفقت نامی شخص کیساتھ وارداتیں کرتارہا،شفقت بہاولنگر کا رہائشی اورعابدکادوست ہے۔ دوسری جانب گوجرپورہ سے ملحقہ گاں پرچھاپے کے دوران مرکزی ملزم عابد اپنی بیوی سمیت فرارہونے میں کامیاب ہوگیاتھا۔ پولیس نے گھرسے ملنے والی عابدکی بیٹی کوتحویل میں لیکرچائلڈ پروٹیکشن بیورو کے حوالے کر دیاہے، پولیس کے مطابق ملزم عابدکے والداوردو بھائیوں سے تفتیش جاری ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں