مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں2 کشمیری نوجوان شہید

سرینگر(اے ایف بی)مقبوضہ کشمیر میں شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے علاقے پٹن میںایک آپریشن کے دوران حریت پسندوں اور بھارتی فورسز کے درمیان تصادم میں دوکشمیری نوجوان حریت پسند شہیدہو گئے۔کشمیر زون پولیس نے بتایا کہ بارہمولہ کے یدی پورہ علاقے میں فورسز کو عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع موصول ہوئی تھی جس کے بعد فورسز نے جمعے کو علی الصبح علاقے کو محاصرے میں لیا اور تلاشی مہم شروع کی ۔بھارتی فورسز نے تین منزلہ مکان میں بارودی مواد نصب کردیا تاکہ مکان کو دھماکے سے اڑا دیا جائے۔ مکان میں اعلیٰ مجاہد کمانڈر سمیت 3حریت پسند محمد عمر لون اور حنیف خان موجود تھے۔ایک مجاہدکے شہید ہونے کے بعد دوسرے مجاہد نے مکان کے شیڈ میں پناہ لے کر مقابلہ جاری رکھا۔ لیکن دن 12بجے کے بعد شدید فائرنگ سے وہ شہید ہو گیا۔

ذرائع کے مطابق علاقے میں3 حریت پسندوں کے چھپے ہونے کی اطلاع تھی۔ اس دوران علاقے کے تمام داخلی اور خارجہ راستوں کو سیل کردیا گیا۔فوجی ذرائع کے مطابق تصادم میں 29 آرآر کاآرمی میجر روہت مشرا زخمی ہواجسے علاج کے لیے ہسپتال میں داخل کرایا گیا۔ ساوتھ ایشین وائر کے مطابق پولیس نے جمعرات کے روز شمالی کشمیر کے بارہمولہ ضلع میں ناکے پر چیکنگ کے دوران عسکریت پسندوں کے تین ساتھیوں کو گرفتار کرنے کا دعوی کیا ہے

۔ایک بیان میں ، پولیس نے کہا کہ سب ڈویژن پٹن ضلع بارہمولہ میں معمول کی جانچ پڑتال کے دوران نیشنل ہائی وے بارہمولہ روڈ پر زنگم کراسنگ سے مین مارکیٹ پٹن کی طرف جانے والے تین افراد کو مشکوک انداز میں حرکت میں لیا گیا۔پولیس ترجمان کا مزید کہنا تھاکہ موقع سے پوچھ گچھ کے دوران انہوں نے اپنی شناخت عابد پرویز ولد پرویز احمد حاجام ساکن اندرگیم پٹن ، جاوید حسن اتو ولد فاروق احمد اتو ساکن گوشغغ پٹن اور جان نصر خالق ولد عبد الخالق گنی رہائشی کے طور پر ظاہر کی۔ پولیس نے الزام لگایا ہے کہ تینوں لشکر طیبہ تنظیم کے لئے معاونین کی حیثیت سے کام کر رہے ہیں۔پولیس نے ضلع شوپیاں میں ایک شہید مجاہد کمانڈر کی یاد میں منعقدہ ایک کرکٹ ٹورنامنٹ میں حصہ لینے پر دس کشمیری نوجوانوں کے خلاف یو اے پی اے کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے۔ ان میں شہید مجاہد کمانڈر کا بھائی سید تجمل عمران بھی شامل ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں