مقبوضہ کشمیر پاکستان کے نقشے میں شامل ہوگیا

اسلام آباد(اے ایف بی) حکومت پاکستان نے اپنا سیاسی آفیشل نقشہ جاری کر دیا جس میں مقبوضہ کشمیر اور لداخ کو پاکستان کا حصہ ظاہر کیا گیا ہے جبکہ لائن آف کنٹرول کو محض فوجی لائن قرار دیاگیا ہے ۔ پاکستان کی جانب سے نقشے کو اقوام متحدہ میں پیش کیا جائےگا ۔

کابینہ اجلاس میں پاکستان کے نئے نقشے کی منظوری دی گئی ۔ وزیراعظم عمران خان نے اجلاس کے دوران شرکا کو نئے نقشے پر مبارکباد دی ۔ اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ایک دن یہی پاکستان کا مستقل نقشہ ہوگا،کشمیر پاکستان کا ہے اور پاکستان کا رہےگا ۔ بھارت نے غیر قانونی طور پر کشمیر کی آئنی حیثیت تبدیل کرنے کی کوشش کی، کشمیر میں بھارتی مظالم کا عالمی برادری کو نوٹس لینا چاہیے، کشمیریوں کی اخلاقی، سفارتی، سیاسی حمایت جاری رکھیں گے

نئے نقشے میں لداخ کو بھی پاکستان کا حصہ بتایا گیا ہے ۔ نئے سیاسی آفیشل نقشے کی تمام سیاسی جماعتیں منظوری دے چکی ہیں ۔ نقشے میں لائن آف کنٹرول کو محض فوجی لائن قرار دیاگیا ہے ۔ نئے نقشے کے مطابق سابقہ فاٹا خیبرپختونخوا کا حصہ اور یہی باوَنڈری اب انٹرنیشنل بارڈر ہوگا ۔ پاکستان کےنئے سیاسی نقشے پر چین کو اعتماد میں لیاگیا ہے ۔ سیکیورٹی کونسل کی قراردادوں پر عملدرآمدکے بعدحتمی نقشہ سامنے آئے گا ۔ لداخ کے معاملے ہر بھی کابینہ کے اجلاس میں کھل کر گفتگو ہوئی، لداخ کے معاملے پر 1963 کے معاہدے کو زیر بحث لایا گیا 

اپنا تبصرہ بھیجیں